مزید باغبانی

ماہرین زراعت کی اگلے ماہ کھجور کے پودوں کی شاخ تراشی

ماہرین زراعت نے اگلے ماہ کھجور کے پودوں کی شاخ تراشی ، پرانے پتوں کو توڑنے ، پھل لگنے والی شاخوں کو کاٹنے اور نئے پتوںسے کانٹے ختم کرنے کی ہدایت کی ہے اور کہاہے کہ باغبان و کاشتکار نومبر کے اختتام تک کھاد ڈالنے کا عمل بھی مکمل کر لیں جبکہ انہوںنے اگلے ماہ دسمبر کے دوران کھجور کے پودوں کو فاسفورس کھاد کی پوری اور نائٹروجن کی آدھی مقدار ڈالنے کا بھی مشورہ دیاہے۔ انہوںنے بتایاکہ کاشتکاروں کو 4سی5کلوگرام ایس ایس پی یا 2کلوگرام ٹی ایس پی اور ایک کلوگرام یوریا کھاد فی پودا استعمال کروانی چاہیے ۔ انہوںنے کہاکہ پھل نہ دینے والے کھجور کے پودوں کیلئے بھی ضروری ہے کہ انہیں آدھی کیمیائی کھاد 30نومبر تک گوبر والی کھادکے ساتھ اور بقیہ کھاد جنوری کے آخری ہفتہ میں ڈالی جائے۔

انہوںنے کہاکہ کھاد تنے سے ایک فٹ دور درخت کی شاخوں کے پھیلائو کے برابر زمین میں ڈال کر اچھی طرح گوڈی کرنے سے اس کے بہترین نتائج حاصل ہو سکتے ہیں ۔

انہوں نے کہاکہ کاشتکار گوڈی کے بعد پانی لگا دیں ۔ انہوںنے 31دسمبر سے قبل درختوں کی شاخ تراشی ، پرانے پتوں کو توڑنے ، جن شاخوں پر پھل لگ چکا ہو انہیں کاٹنے اور نئے پتوںسے کانٹے ختم کرنے کی بھی ہدایت کی تاکہ یہ کانٹے پھل کو زخمی نہ کرسکیں۔

Send this to a friend